اونٹ اگر رائٹ کی طرف بیٹھتا ہے تو عمران حکومت کی اللہ خیر کرے گا،میر عبدالکریم نوشیروانی

کوئٹہ (ڈیلی گرین گوادر)بلوچستان عوامی پارٹی کے سینئر نائب صدر اور سابق صوبائی وزیر میر عبدالکریم نوشیروانی نے کہا ہے کہ اونٹ پہاڑ کے نیچے پہنچ گیا ہے اونٹ لیفٹ اور رائٹ دونوں طرف دیکھ رہا ہے کس کروٹ بیٹھا ہے! رائٹ کی طرف بیٹھتا ہے تو عمران حکومت کا اللہ خیر کرے گا! اگر لیفٹ کی طرف بیٹھتا ہے تو عمران حکومت برقرار رہے گی، آنے والا جون پاکستان کے عوام کے لئے بہت مشکلات لیکر آئے گا حکومت کے پاس بجٹ بنانے کے لئے پیسے نہیں ہیں یہاں تک کہ سرکاری ملازمین کی تنخواہیں بھی ادا کرنا محال ہوگیا ہے۔ یہ بات انہوں نے کوئٹہ میں اپنی رہائش گاہ پر مختلف وفود سے ملاقاتون کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہی سابق صوبائی وزیر میر عبدالکریم نوشیروانی نے کہاکہ عمران خان کے دور حکومت میں شاہ خرچیاں زیادہ ہوئیں عمران خان کے پاس سیاسی کیڈر کی ٹیم کا فقدان رہا نان کیڈرز نے ان کی حکومت کو ناکام بنانے میں زیادہ حصہ ڈالا یہی حال صوبوں کا رہا جہاں نان کیڈر کے لوگ چھائے رہے اور عام انتخابات میں ایسے سلیکٹڈز کو لایا گیا جوکہ اپنی ذات تک محدود رہے۔ انہوں نے صرف مفادات کو ہی مد نظر رکھا عوام اور ملک کے لئے نہیں سوچا۔ انہوں نے مزید کہاکہ ملک میں ایماندار اور محب وطن سیاستدان بہت کم رہ گئے ہیں گزشتہ الیکشن میں سلیکٹڈز کو لا کر ان تھوڑے سے سیاستدانوں کو بھی فٹ پاتھ ناپنے پر مجبور کردیا گیا جس کی وجہ سے سیاسی کیڈر سے منسلک ایماندار اور محب وطن سیاستدانوں کو دھچکا لگا اور وہ مایوس ہوئے۔ انہوں نے کہاکہ عوام کو سیاستدانوں سے زیادہ اپنی پاک افواج اور اداروں پر بھروسہ ہے کیونکہ انہوں نے اس ملک کی بقاء و سلامتی کی قسم کھا رکھی ہے اور اب تک یہ ملک بھی پاک افواج اور اداروں کے کندھوں پر چل رہا ہے سیاستدانوں نے تو اس ملک کو مال غنیمت سمجھ کر لوٹا جس سے معاشی تباہی آئی عمران خان سے بھی بہت توقعات تھیں لیکن نان کیڈر کے لوگوں نے انہیں بھی غلط گائیڈ کرکے تباہی کے دھانے پر لاکھڑا کیا۔ انہوں نے کہاکہ ملک کے عوام پاک افواج اور ان اداروں کی جانب دیکھ رہے ہیں امید ہے کہ وہ آئندہ الیکشن میں سیاسی کیڈر کے ان سیاستدانوں کو آگے لانے میں مدد کریں گے جوکہ اس ملک و سرزمین اور عوام کے ساتھ مخلص ہیں ایماندار ہیں اور محب وطن ہیں جو اس ملک کی بقاء و سلامتی کے بارے میں سوچتے ہیں انہوں نے کہاکہ جب 1947ء میں پاکستان آزاد ہوا تو لارڈبیٹن نے قائد اعظم محمد علی جناح سے پوچھا کہ آپ پاکستان اور انڈیا کا مستقبل کیا دیکھتے ہیں تو انہوں نے تاریخی جواب دیا ایسا ہی جیسا کینڈا اور امریکہ کا لیکن بد قسمتی سے انڈیا میں مودی جیسا دہشت گرد اور مسلمان دشمن پیدا ہوا جو پاکستان اور مسلمانوں کے خلاف انتہائی نفرت رکھتا ہے نے خطے میں خطرناک کھیل کھیلا پاکستان مخالف قوتوں کو پالا اور پیسے کا بے دریغ استعمال کرکے کشمیریوں پر ظلم ڈھائے اور خطے میں دہشت گردی کو فروغ دیا آج بھی پاکستان کے خلاف سازشوں میں مصروف ہے اس کی کوشش ہے کہ پاکستان کو غیر مستحکم کرے لیکن وہ اپنے ان شیطانی سوچ اور حرکتوں میں کبھی کامیاب نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہاکہ عمران خان نے پاکستان کو آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک کے حوالے کردیا ہے لہذا ملک کے ذمہ دار ادارے حالات کی نزاکت کو سمجھتے ہوئے موجودہ حکومت سے عوام کی جان چھڑا کر نئے الیکشن کرائیں اور محب وطن اور ایماندار قیادت کو آگے لائیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے