بلوچستان میں لوگ انصاف کے حصول کے لئے مختلف تکالیف جھیل رہے ہیں، حاجی میر ہاشم نوتیزئی

دالبندین (ڈیلی گرین گوادر) بلوچستان نیشنل پارٹی کے مرکزی رہنماء رکن قومی اسمبلی حاجی میر ہاشم نوتیزئی نے کہا ہے کہ جدید ریاستیں عوام کو ان کی دہلیز پر انصاف فراہم کرتی ہیں مگر بلوچستان میں لوگ انصاف کے حصول کے لئے مختلف تکالیف جھیل رہے ہیں، یہ بات انہوں نے اپنے جاری کردہ ایک بیان میں کہی، انہوں نے کہا کہ رخشان ڈویژن میں انصاف کے حصول کو آسان بنانے اور مختلف شہروں میں جوڈیشل آفیسران سول ججز کی تعیناتی اور ہائی کورٹ بنچ کی منظوری اشد ضروری ہے تاکہ سائلین کو اپنے مقدمات کی پیروی کے لئے آسانی ہو، انہوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ دو سال سے نوکنڈی ماشکیل اور تفتان میں جوڈیشل آفیسران کی تعیناتی نہ ہونے کی وجہ سے عوام اور عدلیہ دونوں کو مشکلات کا سامنا ہے، انہوں نے کہا کہ رخشان کا بلوچستان کے بڑے ڈویژنوں میں شمار ہوتا ہے مگر یہاں پر ہائی کورٹ کا بنچ نہ ہونے کی وجہ سے شہری اپنے آئینی و قانونی جنگ لڑنے سے محروم ہو رہے ہیں، ضلع چاغی اور واشک کے اہم تحصیلوں کے عدالتوں میں مستقل طور پر ججز کی تعیناتی نہ ہونا انصاف کے دروازے بند کرنے کے مترادف ہے، انہوں نے چیف جسٹس اور ہائی کورٹ بار سے مطالبہ کیا ہے کہ رخشان ڈویژن میں ہائی کورٹ کی بنچ کی منظوری کی جائے اور عدالتوں میں سائلین کو انصاف کی فوری فراہمی کے لئے آفیسران کی جلد تعیناتی کی جائے تاکہ لوگوں کا ریاست پر اعتماد برقرار رہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے