میرے خلاف من گھڑت الزامات کے تحت منظم پروپیگنڈہ کیا گیا،میر عمیر محمد حسنی

دالبندین:کراچی میں کیفے پر جھگڑنے کے متعلق بلوچستان کے سابق سینیٹر سردار فتح محمدحسنی کے صاحبزادے میر عمیر محمدحسنی نے ویڈیو بیان میں انہوں نے خود پر لگائے گئے الزامات کو یکسر مسترد کرتے ہوئے انھیں بے بنیاد پروپیگنڈہ قرار دے دیا۔ میر عمیر محمدحسنی نے اپنے گھر میں ان دو افراد کے ساتھ بیٹھ کر ویڈیو بیان ریکارڈ کرایا جن کے ساتھ مبینہ طور پر ابتدا میں ان کا جھگڑا ہوا تھا ویڈیو بیان میں عمیر محمدحسنی کا کہنا تھا کہ ان کے خلاف من گھڑت الزامات کے تحت منظم پروپیگنڈہ کیا گیا جو قابل مذمت ہے انہوں نے سوال کیا کہ کہاں ہے وہ لڑکی جس کو ہراساں کرنے کا الزام ان پر لگایا گیا تھا ان کے مطابق بتایا گیا کہ ان کے گاڑیوں پر نمبر پلٹس نہیں تھے جو سراسر جھوٹ تھا انہوں نے دعویٰ کیا کہ ان کی تصویر ایڈٹ کرکے جیل میں دکھاکر گرفتاری کی جھوٹی خبر دی گئی. بقول ان کے نہ ان پر کوئی مقدمہ بنا اور نہ ہی ان کی اس سلسلے میں گرفتاری ہوئی. انہوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ میں حیران ہوں کہ اتنے ذمہ دار چینلز نے سارے معاملے میں میرا موقف کیوں نہیں لیا؟ انہوں نے واضح کیا کہ انہوں نے باہر ملک سے تعلیم حاصل کی، اس کے علاوہ وہ وزیر اعلی بلوچستان کا کورونا کے متعلق مشیر رہ چکے ہیں. انہوں نے دعویٰ کیا کہ کیفے والے خود میرے لوگوں کے ساتھ الجھے پھر ایک چھوٹی سی ویڈیو کلپ کی بنیاد پر پروپیگنڈہ کروایا. انہوں نے کہا کہ ابتدا میں غلطی سے جن لوگوں سے الجھے پھر ان کے ساتھ مسئلہ حل ہوگیا، میں اور میرے لوگوں نے کسی پر تشدد یا فائرنگ نہیں کی. ان کے مطابق اگر ہم نے کسی پر تشدد کی ہوتی تو اس کی میڈیکل رپورٹ اور ایف آئی آر درج ہوتی جو کہ نہیں ہوئی لہذا بلا تحقیق پروپیگنڈہ کرنے سے گریز کیا جائے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے